ثمینہ سید

عادل فراز

1۔آپ کا نام؟
جواب: اصل نام ثمینہ سید
2۔ آپ کی تاریخ پیدائش؟
جواب:10 مارچ 1973
3۔کہاں پیدا ہوئیں؟
جواب:پاکپتن
4۔آپ کی تعلیم؟
جواب: ایم اے اردو ،ایم اے ہسٹری بی ایڈ ،ایم ایڈ اور ایم فل جاری ہے
5۔ملازمت کرتی ہیں؟
جواب:جی ہاں۔اردو پڑھاتی ہوں
6۔ آپ کا مشغلہ کیاہے؟
جواب:کتابیں پڑھنے کا جنون ہے
7۔ پسندیدہ رنگ کون سا ہے؟
جواب: ڈارک بلیو اور پرپل
8۔پھول کون سا پسند ہے؟
جواب: سفید گلاب
9۔ پسندیدہ خوشبو؟
جواب:کافی طرح کے پرفیومز اور باڈی سپرے پسند ہیں۔
10۔ موسم کیسا پسند ہے؟
جواب: پسندیدہ موسم تو اداس سرد موسم ہے۔
یاد اس کی ثمینہ دسمبر کے پہلو میں بیٹھی رہی
میرے ہمراہ یہ بھی ٹٹھرتی رہی شب گزرتی رہی
11۔ پسندیدہ رشتہ؟
جواب:بیٹی
12۔ شادی ہو گئی؟ اگر ہاں تو کچھ بتائیں؟
جواب:شادی بہت چھوٹی عمر میں ہوئی تھی دو بچے ہیں۔شوہر کی وفات کو نو سال ہو گئے میں نے اور بچوں نے ساتھ ساتھ تعلیمی مراحل پورے کئے۔اب ماشا اللہ بچے بڑے ہو گئے ہیں۔ان سے وفا اور محبت کی امید ہے۔بسسسسس اور بہن بھائی بہت پیارے رشتے ہیں جو ہمیں دکھوں کی فضا میں سہارا دیتے ہیں ابھرنا سکھاتے ہیں۔
13۔ پسندیدہ گلوکار؟
جواب:پسندیدہ گلوکار غلام علی ،جگجیت سنگھ
14۔پسندیدہ کھانا؟
جواب:پسندیدہ کھانا کوئی خاص نہیں ۔پکانے کا بہت شوق ہے۔
15۔ ٹی وی دیکھتی ہیں؟ کیا شوق سے دیکھتی ہیں؟
جواب:کئی ٹی وی ڈرامے پسند ہیں اور فلم “اجازت” بہت پسند ہے۔
16۔پسندیدہ کتاب؟
جواب:کتاب اشفاق احمد صاحب کی کتاب زاویہ بہت پسند ہے کئی بار پڑھی
17۔ اپنی کون سی عادت پسند ہے؟
جواب:اپنی صبر و تحمل کی عادت پسند ہے بھرم قائم رہتا ہے۔
18۔خود کی کون سی عادت ناپسند ہے؟
جواب:یہی عادت ناپسند ہے کہ لوگ ہمیں ایزی لینے لگتے ہیں صبر وتحمل کی وجہ سے۔
19۔فورم پر پسندیدہ اور ناپسندیدہ شخصیات؟
جواب:فورم پہ پسندیدہ شخصیت ہیں جناب اقبال حسن آزاد صاحب اور نا پسندیدہ بالکل کوئی نہیں لگا کبھی۔
20۔فرومز پر آمد کے بارے میں کچھ بتائیں؟
جواب:فورمز پہ آمد کا یہی کہوں گی کہ حقائق کو جوائن کیا تھا سب سے پہلے افسانے پڑھنے کی محبت میں مجھے بے انتہا خوشی ہوئی تھی کہ نثر کے لئے بھی کسی نے سوچا۔
میں نے اپنا افسانہ لگایا تھا شجر سایہ دار۔
21۔آپکی نظر میں آپکی خوبی؟
جواب:میری خوبی یہ کہ میں بہت قناعت پسند ہوں
22۔ آپکی خامی؟
جواب:خامی یہ کہ ناپسندیدہ لوگوں اور باتوں پہ بولے بغیر رہ ہی نہیں پاتی
23۔بچپن کی کوئی یاد شیئر کرنا چائیں؟
جواب: بچپن کے دن بہت اچھے تھے بہت شوخ چنچل تھی ہر وقت بال لمبے کرنے کے ٹوٹکے آزماتی تھی
دلچسپ واقعہ یہ ہے کہ مجھ سے بڑا بھائی تھا اکلوتا لاڈلا ہماری امی جان ہمیں گھر سے باہر نہیں نکلنے دیتیں تھیں لہذا سارے کھیل ہم گھر میں ایجاد کرتے تھے۔بھائی کو پتنگ اڑانے کا شوق تھا اور امی ہماری ہر وقت تہذیب سکھانے والی خاتون کبھی پتنگ کو ہاتھ نا لگانے دیا ایک بار گھر میں نہیں تھیں بھائی جلدی سے باہر گیا پتنگ لے آیا مجھے کہا آجاؤ اوپر جلدی کرو۔اب مجھے لگایا کہ اوپر والی چھت پہ چڑھو اور “کنی” دو پتنگ کو بڑا بھائی ۔اب مرتی کیا نا کرتی کنی دیتی گئی پیچھے ہٹتی گئی ہٹتی گئی اور چھت سے نیچے جا گری دوسری طرف پڑوسی خالہ سوئی ہوئی تھیں صحن میں انکے اوپر جا گری انہوں نے خوب چیخیں ماریں اور بہہہت مجھے مارا میں تو بچ گئی وہ دس دن ہاسپٹل میں رہیں۔انتڑیاں خراب ہو گئیں۔
24۔ غصہ یا ٹینشن میں کیا کرتی ہیں؟
جواب:غصہ یا ٹینشن میں بہت خاموش ہو جاتی ہوں خوب روتی ہوں۔
25۔پہلی ملاقات میں کیا جائزہ لیتی ہیں؟
جواب:پہلی ملاقات میں شخصیت کا جائزہ لیتی ہوں بناوٹی یا جھوٹا لگے تو ایک پل بھی نہیں رک پاتی۔
26- سونے سے پہلے اور جاگنے کے بعد کیا کرتی ہیں؟
جواب:سونے سے پہلے لازمی کلمہ پڑھتی ہوں اور آنکھ کھلتے ہی کلمہ پڑھتی ہوں۔پھر جلدی اٹھنے پہ کڑھتی ہوں روزانہ بلا ناغہ۔
27- اگر آپ کو صدر بنا دیا جائے تو کیا کریں گی؟
جواب:صدر بننے کا کوئی شوق نہیں بہت مشکل کام ہے
بہت مشہور نثر نگار بننے کی خواہش ہے
مستقبل میں ماڈرن سی دادی بن کے ورلڈ ٹور پہ جا ؤں گی۔اپنے پوتے،پوتی کے ساتھ۔ہاہاہا ہا
28۔کوئی پیغام دینا چاہیں گی؟
جواب:دوسروں کے لئے پیغام یہ کہ منافقت نا کریں سب سے دل سے ملیں لوگ کبھی برے نہیں ہوتے ہمارا نظریہ اور موڈ چیزوں کو اچھا یا برا بناتا ہے۔کسی سے امید نا رکھیں اللہ عزوجل کی ذات بے تحاشہ مہربان ہے بہت نوازتا ہے ہمیں ہماری اوقات سے زیادہ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں