،، یکجا کلام ،، عمران نذیر وٹو

برائےیکجا کلام
عمران نذیر وٹو
نمبر شمار 58
کلام

بھٹکا ہوا ہے آج یہ انسان کیوں
اقبال کا بنتا نہیں دیوان کیوں

جنت کے جیسے تھے نظارے جو یہاں
ہائے انھیں تو کر گیا سنسان کیوں
پیغام لے جاؤ حکومت تک یہ تم
بدنام میرا آج پاکستان کیوں

جس کے ستم سے لٹ گیا یہ آشیاں
ایسے ستم کی آسماں پروان کیوں
جن کی زباں حق کے لیے تھی بولتی
بیچے وہی اپنا یہاں ایمان کیوں
لے جا رہا ہے رستہ گمراہی میں جو
اس راہ سے لپٹا ہوا عمران کیوں

عمران نذیر وٹو
(چونیاں ضلع قصور)

اپنا تبصرہ بھیجیں