،، یکجا کلام ،، ڈاکٹر محمد تبسم پرویز

برائےیکجا کلام
ڈاکٹر محمد تبسم پرویز
نمبر شمار54
کلام

نعتِ رسولﷺمقبول

( الہم صلے علے سیدنا محمد و علٰی آلہ و صحبہ و بارک و سلم ))

در پہ سرکارﷺ کے دل اپنا جھکا تے ہم بھی
اس طریقے سے الہی کو مناتے ہم بھی

جو کبھی جاتے مدینے کی حسیں گلیوں میں
تو کبھی لوٹ کے بھارت میں نہ آتے ہم بھی

ساری عصیاں کو مٹا دیتا خدا گر آنسو
ان گنہگار نگاہوں سے بہاتے ہم بھی

ظلم سہتے تھے امیہ کے بلال ِ حبشی
ایسا الفت کا درس کاش سکھاتے ہم بھی

گر میسر ہو درِ پاکِ نبیﷺ پر جانا
یا نبیﷺ آپ کو اک نعت سناتے ہم بھی

دیکھتے پھر نہ کبھی دنیا کے پھر نظارے
خواب میں انکی جھلک ایک جو پاتے ہم بھی

کچھ نہ کچھ راز ہے جو دور ہیں اے شہر نبی
ورنہ سرکارﷺ کی قربت میں تو جاتے ہم بھی

اپنی بینائ کو پھر تیز کچھ ایسے کرتے
خاک آنکھوں میں مدینے کی لگاتے ہم بھی

کاش طیبہ کے گلی کوچوں میں جاتے اور پہر
دل سے اک نعرہ رسالت کا لگاتے ہم بھی

دل میں آئینگے شہ دین تبسم جو کبھی
اس کے رستوں کو محبت سے سجاتے ہم بھی

ڈاکٹر محمد تبسم پرویز
انڈیا

اپنا تبصرہ بھیجیں