،، فیس بک ،، راجہ یوسف

37″ندائے وقت (سلسلہ مکالمات)
تحریر۔۔۔ راجہ یوسف ۔(کشمیر ۔انڈیا)
عنوان ۔۔۔۔۔۔ فیس بک
بینر ۔۔۔ فاطمہ عمران
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ ۔۔۔ ہیلو
میں ۔۔۔ ہیلو
وہ ۔۔۔ کیسے ہیں آپ
میں ۔۔۔ الحمدللہ
وہ ۔۔۔ آپ نے ابھی تک میری بات کا جواب نہیں دیا
میں ۔۔۔ بات ؟؟؟ یہ مذاق تو تم پچھلے ایک سال سے میرے ساتھ کرتی چلی آرہی ہو ۔ اور میں نے کئی بار تمہیں جواب بھی دے دیا ہے ۔
وہ ۔۔۔ وہ تو آپ اپنا جواب دیتے ہیں نا
میں ۔۔۔ ہاں ؟ اور کس کا جواب دے دوں؟؟؟
وہ ۔۔۔ میرا جواب !
میں ۔۔۔ تیرا جواب ؟ ۔۔۔میں سمجھا نہیں؟؟؟
وہ ۔۔۔ میرا جواب ۔۔۔ مطلب میرا جواب ۔۔۔ وہ جواب جو میں چاہتی ہوں۔ وہ جواب آپ نہیں دے رہے ہیں نا
میں ۔۔۔ کمال کرتی ہو تم بھی ۔۔۔ تیرا جواب ، میرا جواب کیسے ہوسکتا ہے ؟
وہ ۔۔۔ یہی تو میں پچھلے ایک سال سے آپ کو سمجھا رہی ہوں ۔ اپنی ہاں کو میری ہاں کے ساتھ ملائے نا
میں ۔۔۔ ہاہاہاہاہا ۔۔۔ پھرا میرا اپنا کیا رہے گا
وہ ۔۔۔ میرا سارا تو آپ ہی کا ہے ۔ آپ کو فکر کرنے کی ضرورت ہی کیا ہے ۔ یہاں اتنے بڑے شہر میں میرا اپنا گھر ہے، بزنس ہے ۔ پیسہ ہے ۔ وہ سب آپ ہی کا تو ہے ۔
میں ۔۔۔ تم جانتی ہو میں 40 پلس کا ہوں
وہ ۔۔۔ کتنی بار کہا مرد اور گھوڑے ، بوڑھے نہیں ہوتے
میں ۔ میں نے بھی کتنی بار کہا ہے تم کوووو ۔۔۔ میں شادی شدہ ہوں؟ میری بچے جواں ہیں ۔۔؟؟ اور میں دوسری شادی نہیں کرسکتا ؟؟؟
وہ ۔۔۔ کیوں نہیں کرسکتے ۔ آپ تو مسلم ہیں اور آپ کی چار شادیاں جائز ہیں
اور جب مذہب کی بات آجاتی ہے تو ۔۔۔۔۔۔ تو میں لاجواب ہوجاتا ہوں

اپنا تبصرہ بھیجیں